او آئی سی فلسطین کے معاملے پر ٹھوس اقدامات کرے، عمران خان

اسلام آباد: (کوہ نور نیوز) وزیراعظم عمران خان نے او آئی سی سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اسلامو فوبیا کے تدارک اور فلسطین کی سنگین صورتحال سے نمٹنے کے لیے موثر کردار ادا کرے۔ ان خیالات کا اظہار وزیراعظم عمران خان سے اسلامی تعاون تنظیم کے سکریٹری جنرل سے ملاقات میں کیا، دوطرفہ ملاقات میں اسلامو فوبیا کے بڑھتے واقعات سے متعلق گفتگو کی گئی۔ وزیر اعظم نے او آئی سی کی جانب سےاسلامو فوبیا کے خلاف ٹھوس ردعمل پر زور دیتے ہوئے کہا کہ مسلم ممالک کے سربراہان مملکت کو لکھے گئے خط کے بعد اسلامو فوبیا کے تدارک کے لیے متفقہ قرارداد منظور کی گئی تھی۔ وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ مسلمان راہنماؤں کو اس حوالے سےاجتماعی کوشش کرنی ہوگی،دنیا کو مسلمانوں کی حضور اکرم (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کے ساتھ محبت اور عقیدت کے حوالے سے بتانا ہو گا،کسی کو بھی اسلام اور دہشت گردی کے مابین کوئی ربط پیدا کرنے کی اجازت نہ دی جائے۔ وزیر اعظم نے مسجد اقصیٰ میں فلسطینیوں کے خلاف اسرائیلی حملے کی شدید مذمت کی، ان کا کہنا تھا کہ عدم رواداری،مذہب یا عقیدے کی بنیاد پر تشدد پر اکسانے کے خلاف عالمی برادری کو مشترکہ حل پر کام کرنا ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ دنیا فلسطینیوں کی حفاظت کے لیے اپنا کردارادا کرے اور انہیں حقوق دلائے۔ ملاقات میں او آئی سی کے سیکریٹری جنرل نے وزیراعظم کو مسئلہ کشمیر سے متعلق تنظیم کی سرگرمیوں سے آگاہ کیا اس موقع پر ان کا کہنا تھا کہ او آئی سی نے مستقل طور پر کشمیر کے مقصد کی حمایت کی ہے، او آئی سی کانفرنس میں مسئلہ کشمیر پر ایک جامع قرارداد منظور کی گئی۔ دریں اثنا عمران خان نے اسرائیلی فورسز کے مسجد اقصیٰ پر حملے کی بھی مذمت کی اور مطالبہ کیا کہ عالمی برادری اس معاملے پر فوری طور پر نوٹس لیتے ہوئے فلسطینی باشندوں کے تحفظ کے لیے اقدامات کرے۔