حکومت کیخلاف مقصد حاصل ہونے تک دھرنا جاری رہے گا: پی ڈی ایم

اسلام آباد: (کوہ نور نیوز) پاکستان ڈیمو کریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کی سفارشات پیش میں کہا گیا ہے کہ لانگ مارچ کے بعد دھرنا اس وقت تک جاری رہے گا جب تک کہ مقصد حاصل نہیں ہوتا ہے۔ تفصیلات کے مطابق وفاقی دارالحکومت میں پاکستان ڈیمو کریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کا اجلاس جے یو آئی ف کے امیر مولانا فضل الرحمان کی زیر صدارت اہم اجلاس ہوا۔ اجلاس میں پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے چیئر مین بلاول بھٹو زرداری اور پاکستان مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز سمیت دیگر رہنما شریک ہوئے۔ تفصیلات کے مطابق پی ڈی ایم کے رہنماؤں کے اجلاس میں آئندہ ہفتے ہونے والے سینیٹ کے چیئر مین اور ڈپٹی چیئر مین کے ناموں پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ ذرائع کے مطابق اجلاس کے دوران پاکستان ڈیمو کریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کے حکومت مخالف احتجاج اور ملک کے سبے سے بڑے صوبے پنجاب میں اِن ہاؤس تبدیلی پر غور کیا جا رہا ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ پی ڈی ایم کمیٹی کی سفارشات بھی اجلاس میں پیش کی گئی ہیں، سفارشات کے مطابق لانگ مارچ 26 مارچ کو کراچی سے ایک عوامی اجتماع کے ساتھ شروع ہوگا، تمام جلوس 30 مارچ کی سہ پہر 3 بجے تک اسلام آباد پہنچیں گے۔ سفارشات کے مطابق تمام جماعتیں ذیادہ سے ذیادہ افراد کو لانے کیلئے طرح متحرک ہوں، شرکاء کے استقبال کیلئے فیض آباد میں مرکزی کیمپ لگایا جائے گا، روات چوک، 26 نمبر چونگی، بارہ کہو سمیت دیگر اہم جگہوں پر میں کیمپ لگایا جائے گا، تمام جماعتیں اپنے جلوسوں کو الگ، الگ سے منظم کریں گی۔ سفارشات کے مطابق تمام جماعتیں اپنے اخراجات برداشت کریں گی، پی ڈی ایم کی سینئر قیادت کو فوری طور پر چاروں صوبوں کا دورہ کرنا چاہئے، لانگ مارچ کے لئے لوگوں کو متحرک کرنے کے لئے ایک مشترکہ نظم تیار کی جائے، لانگ مارچ کے لئے مختلف کمیٹیاں فوری طور پر تشکیل دی جائیں، مختلف کمیٹیوں میں کنٹرول روم، میڈیا اور تشہیر کمیٹی، استقبالیہ کمیٹی شامل ہے۔ کمیٹی سفارشات کے مطابق سیکیورٹی کمیٹی، سہولیات کمیٹی، لیگل کمیٹی، فنانس کمیٹی،پروگرام کمیٹی، فوڈ کمیٹی، میڈیکل کمیٹی شامل ہے۔ دھرنے کے مقام پر شرکاء کے پہنچنے سے قبل انتظامات کئے جائیں، دھرنا اس وقت تک جاری رہے گا جب تک کہ مقصد حاصل نہیں ہوتا ہے، تاجروں ، کسانوں اور مزدور یونینوں سے رابطہ کیا جائے اور انہیں مکمل طور پر متحرک کیا جائے۔