اسسٹنٹ کلیکٹرزکوعہدوں سے ہٹانے کا کیس: توہین عدالت کی کارروائی ختم کرنے کیلئے درخواست مسترد

کراچی(کوہ نور نیوز)سندھ ہائیکورٹ نے اسسٹنٹ کلیکٹرکاامتحان پاس نہ کرنے والے افسران کوعہدوں سے ہٹانے کے کیس میں توہین عدالت کی کارروائی ختم کرنے کیلئے درخواست مستردکرتے ہوئے وکلاکو 10ہزارروپے جرمانہ کردیا۔ نجی ٹی وی کے مطابق سندھ ہائیکورٹ میں اسسٹنٹ کلیکٹرکاامتحان پاس نہ کرنے والے افسران کوعہدوں سے ہٹانے کے کیس کی سماعت ہوئی،ایڈووکیٹ جنرل سندھ،سیکرٹری سروسز،درخواست گزاراوروکلاپیش ہوئے۔ عدالت میں توہین عدالت کی کارروائی ختم کرنے کیلئے درخواست دائر کردی گئی،درخواست ریونیوبورڈممبر سمیت 9 افسران کے وکلانے دائرکی ،عدالت نے شکیل الزمان اوردیگرکی درخواست مستردکرتے ہوئے وکلاکو 10ہزارروپے جرمانہ کردیا،عدالت نے ریمارکس دیتے ہوئے کہاکہ عدالتی حکم پرعملدرآمدنہیں ہوتاتوکارروائی کیسے ختم کرسکتے ہیں،عدالت نے سیکرٹری سروسزکی عملدرآمدرپورٹ مستردکردی ۔ رپورٹ میں کہاگیاہے کہ کلیکٹرون اورٹوکاامتحان نہ دینے والوں کیخلاف کارروائی شروع کردی،عدالت نے عملدرآمدرپورٹ پیش کرنے کیلئے سندھ حکومت کو 2 ہفتے کی مہلت دیدی۔ واضح رہے کہ عدالت نے تمام افسران کوکلیکٹرون اورٹوکاامتحان دینے کاحکم دیاتھا ،عدالتی حکم کے باوجودافسران ابھی تک عہدوں پربراجمان ہیں۔