مضر صحت اجزا کی ملاوٹ، کھلے دودھ کی فروخت بند کرنے کا منصوبہ زیر غور

لاہور: (کوہ نور نیوز) لاہور میں فروخت ہونے والے کھلے دودھ میں ملاوٹ کی شرح بڑھ گئی۔ کیمیکلز، سرف اور دیگر مضر صحت اجزا کی ملاوٹ نے صحت بخش دودھ کی دستیابی مشکل تر بنا دی۔ پنجاب فوڈ اتھارٹی بھی آئندہ سال کے دوران کھلے دودھ کی فروخت بند کرنے کے منصوبے پر کام کر رہی ہے۔ انسانی صحت کے لیے دودھ کی اہمیت مسلمہ ہے جس کا اندازہ اِس امر سے بھی لگایا جا سکتا ہے کہ دنیا میں آنے والے ہر بچے کی پہلی قدرتی غذا دودھ ہی ہے جس کا استعمال سبھی کے لیے اہم قرار دیا جاتا ہے۔ بدقسمتی سے لاہور میں انسانی خوارک کا یہ اہم جزو بھی ملاوٹ سے پاک نہیں رہا۔ پانی ملانے کی باتیں تو قصہ پارینہ بن چکیں کہ اب اِس میں سرف اور کیمیکلز ملانے سے بھی گریز نہیں کیا جاتا۔ اِس صورت حال کے پیش نظر ماہرین کھلے دودھ کے استعمال سے گریز کا مشورہ دیتے ہیں۔ موجودہ حالات کے باعث پنجاب فوڈ اتھارٹی بھی آئندہ سال کے دوران کھلے دودھ کی فروخت بند کرنے کے منصوبے پر کام کر رہی ہے۔