’گستاخانہ خاکوں کا دفاع تشدد اور خونریزی کو ہوا دے سکتا ہے،‘ ایران

تہران: (کوہ نور نیوز) ایرانی صدر حسن روحانی نے خبردار کیا ہے کہ فرانس کی جانب سے پیغمبرِ اسلامﷺ کی شان میں گستاخانہ اور توہین آمیز خاکوں کا دفاع کرنا ’’تشدد اور خونریزی‘‘ کو ہوا دے سکتا ہے۔ خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق، بدھ کے روز ایران کے سرکاری ٹیلی ویژن پر براہ راست نشر ہونے والے کابینہ اجلاس میں ایرانی صدر کا کہنا تھا کہ پیغمبرِ اسلامﷺ کی توہین کوئی کامیابی نہیں بلکہ یہ غیر اخلاقی اور تشدد کو ہوا دینے والا طرزِ عمل ہے۔ ’’حیرت انگیز طور پر یہ سب کچھ وہ لوگ کررہے ہیں جو جمہوریت اور تہذیب کے دعویدار ہیں۔ انجانے میں ہی سہی، لیکن وہ خون خرابے اور تشدد کو ہوا دے رہے ہیں،‘‘ ایرانی صدر نے کابینہ اجلاس میں گفتگو کرتے ہوئے کہا۔ اُدھر ترکی نے بھی فرانسیسی میگزین چارلی ایبدو میں ترک صدر رجب طیب اردوان کے کارٹون شائع کرنے پر قانون اور سفارتی کارروائی کرنے کا اعلان کیا ہے۔ ترک ایوان صدر کے جاری کردہ بیان کے مطابق: ’’ہم اپنے عوام کو یقین دلاتے ہیں کہ ان کارٹونوں کے خلاف ضروری قانونی اور سفارتی کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔‘‘ اس تناظر میں ترکی کے پراسیکیوٹر آفس نے چارلی ایبدو کے خلاف تحقیقات شروع کردی ہیں۔