نواز شریف کو پاکستان لانے کیلئے باہمی قانونی معاونت کی درخواست برطانیہ کو نہ دی جاسکی

سابق وزیراعظم نواز شریف کو پاکستان لانے کیلئے باہمی قانونی معاونت کی درخواست برطانیہ کو نہ دی جاسکی۔ حکومت کی جانب سے نواز شریف کو وطن واپس لانے کی کوششوں کو شدید دھچکا لگا ہے اور قانونی پیچیدگیاں آڑے آگئیں ہیں۔ ایسی معاونت کی درخواست وفاقی تحقیقاتی ایجنسی (ایف آئی اے)، قومی احتساب بیورو(نیب) یا محکمہ انسداد دہشت گردی (سی ٹی ڈی) کی درخواست پربھیجی جاسکتی ہے۔ تاہم برطانیہ سے باہمی قانونی معاونت کی درخواست بھیجنے کی حتمی منظوری وفاقی کابینہ دے گی۔ خیال رہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف علاج کیلئے لندن میں مقیم ہیں جہاں سے انہوں نے سیاسی سرگرمیاں شروع کردی ہیں۔ وزیراعظم اور وفاقی کابینہ نواز شریف کی سیاسی سرگرمیوں پر سیخ پا ہیں اور وزیراعظم عمران خان متعدد بار مختلف تقریبات اور انٹرویوز میں کہہ چکے ہیں کہ نواز شریف کو ہرت صورت وطن واپس لائیں گے۔ گزشتہ دنوں بھی اپنے انٹرویو میں عمران خان نے کہا کہ اگر نواز شریف کو وطن واپس لانے کیلئے برطانوی وزیراعظم سے بات کرنا پڑی تو بھی کریں گے۔