”اظہر علی کے ساتھ سرفراز احمد والی تاریخ نہ دہرائی جائے“ سابق کپتان معین خان نے پی سی بی کو مشورہ دے دیا

کراچی(کوہ نور نیوز ) سابق ٹیسٹ کپتان معین خان نے کہا ہے کہ پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان معین خان کا کہنا ہے کہ اظہر علی کے ساتھ سرفراز والی تاریخ نہ دہرائی جائے، اس میں کرکٹ باقی ہے، ٹاسک دیں، اگر پورا نہ کرے تو پھر عزت سے خیرباد کہہ دیں۔کراچی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سابق کپتان کاکہنا تھا کہ ٹیسٹ ٹیم کی کپتانی میں تبدیلی کا فیصلہ سوچ سمجھ کر کرنا ہوگا، اظہر علی کی کپتانی پر اگر سوال اٹھے ہیں تو اس کی وجوہات بھی ہیں۔ان کاکہنا تھا کہ زمبابوے کے خلاف سیریز بہت اہمیت کی حامل ہے، مہمان ٹیم کے مقابلے میں پاکستان کرکٹ ٹیم زیادہ مضبوط اور بہتر ہے، پاکستان کو زمبابوے کے خلاف ون ڈے انٹرنیشنل اور ٹی ٹوئنٹی سیریز میں باصلاحیت اور نئے کھلاڑیوں کو موقع دینا ہوگا، قومی ٹی 20 ٹورنامنٹ میں اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے کھلاڑیوں کی صلاحیتوں سے فائدہ اٹھانا ہوگا۔ ایک سوال کے جواب میں سابق کپتان معین خان نے کہاکہ اصل مقابلہ ساوتھ افریقہ کی ٹیم سے ہو گا،جنوبی افریقہ کی ٹیم پاکستان کے مقابلے میں زیادہ مضبوط ہے، جنوبی افریقہ کے خلاف ایک موثر لائحہ عمل کے ساتھ میدان میں اترنا ہوگا، مضبوط اور اچھے کھلاڑیوں پر مشتمل جنوبی افریقہ کی ٹیم کے خلاف بہترین حکمت عملی ہی کامیابی دلواسکتی ہے، جنوبی افریقہ کے خلاف سیریز بہت سے کھلاڑیوں کے مستقبل کا تعین کرے گی۔