کورونا وائرس: ٹائیگر فورس کی تشکیل کا طریقہ کار طے کر لیا گیا

اسلام آباد: (کوہ نورنیوز) وزیراعظم کی طرف سے اعلان کردہ ٹائیگر فورس کی تشکیل کا طریقہ کار طے کر لیا گیا۔ معاون خصوصی برائے یوتھ افئیرز عثمان ڈار کو اہم ذمہ داریاں سونپ دی گئیں۔ وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت پرائم منسٹر کورونا ریلیف ٹائر فورس کی تشکیل کے معاملے پر اہم اجلاس ہوا۔ اجلاس کے دوران معاون خصوصی برائے یوتھ افئیرز عثمان ڈار، پرنسپل سیکرٹری اعظم خان اور مرزا شہزاد اکبر شریک ہوئے۔ چئیرمین نیشنل انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ اور سیٹزن پورٹل کی ٹیم کے ارکان نے بھی شرکت کی۔ اجلاس کے دوران ٹائیگر فورس کی تشکیل کا طریقہ کار طے کر لیا گیا جبکہ وزیراعظم نے ہنگامی صورت حال کے پیش نظر بروقت پیشگی اقدامات کی ہدایت کی ہے۔ اس دوران معاون خصوصی برائے یوتھ افئیرز عثمان ڈار کو بھی اہم ذمہ داریاں سونپ دی گئیں۔ ٹائیگر فورس کے لیے وزیراعظم خود نوجوانوں کے لئے خصوصی پیغام ریکارڈ کروائیں گے۔ 18 سال سے زائد عمر کے صحتمند نوجوان سٹیزن پورٹل کے ذریعے رجسٹریشن کرائیں گے۔ ملک بھر سے رجسٹرڈ رضا کار ضلعی انتظامیہ اور این ڈی ایم اے کے ساتھ ملکر کام کریں گے، ڈپٹی کمشنرز، اے سی، ٹی ایم اوز اور ارکان پارلیمنٹ رضاکاروں کو سہولیات فراہم کریں گے، ضلعی و تحصیل انتظامیہ روزانہ کی بنیاد پر کورونا ریلیف ٹائیگرز کو ڈیوٹیز اسائن کریں گے۔ کورونا ریلیف ٹائیگرز کی نشاندہی پر انتظامیہ اور پولیس فوری کارروائی کریں گے، رضاکار این ڈی ایم اے کے ساتھ ملکر گھروں میں راشن پہنچائیں گے، رضاکار اشیائے ضروریہ کے لیے جگہ اور سٹوریج کا بندوسبت کریں گے۔ یہ بھی پڑھیں: نوجوان ہنگامی حالات میں مدد کے لئے تیار رہیں: وزیراعظم عمران خان شہروں اور دیہاتوں میں قائم قرنطینہ مراکز کا انتظامات میں بھی حصہ لیں گے، کورونا ریلیف ٹائیگرز گھروں میں قرنطینہ ہوئے لوگوں کی دیکھ بھال بھی کریں گے، رضاکار ہسپتالوں اور عوامی مقامات پر لوگوں کو گائیڈ لائنز فراہم کریں گے۔ کورونا ریلیف ٹائیگرز بے روزگار افراد کا ڈیٹا اکھٹا کریں گے، کورونا کے مشتبہ مریضوں سے متعلق معلومات بھی اکھٹی کریں گے، کورونا ریلیف ٹائیگرز لاک ڈاون پر عملدرآمد یقینی بنانے میں انتظامیہ اور پولیس کی مدد کرینگے۔ رضاکار ذخیرہ اندوزی اور زائد قیمتوں سے متعلق بھی نشاندہی کریں گے، رضاکار اعلانات اور جنازوں کے انتظامات میں بھی حصہ لیں گے، کورونا ریلیف ٹائیگرز کو متعلقہ سرکاری افسران روانہ کی بنیاد پر بریفنگ دیں گے۔ اس سے قبل وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ چین میں لاک ڈاؤن کے دوران نوجوانوں نے فوڈ سپلائی بحال رکھی، نوجوان ہنگامی حالات میں مدد کے لئے تیار رہیں۔ وزیراعظم عمران خان نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ پاکستان کو افرا تفری کی صورت حال سے بچانے کے لئے پیشگی اقدامات ضروری ہیں، امید ہے نوجوان قومی فریضہ سمجھتے ہوئے اپنا بہترین کردار ادا کریں گے۔ دوسری جانب پرائم منسٹر کورونا ریلیف ٹائیگر فورس کی تشکیل کے لیے وزیراعظم کی ہدایت پر معاون خصوصی برائے یوتھ افئیرز عثمان ڈار نے کورونا ریلیف ٹائیگر فورس پر کام شروع کر دیا، 31 مارچ سے 10 اپریل تک ملک بھر سے رضاکاروں کی رجسٹریشن سیٹیزن پورٹل پر ہوگی۔ معاون خصوصی عثمان ڈار نے اس حوالے سے کہا ہے کہ ٹائیگر فورس مکمل لاک ڈاؤن یا کرفیو کی صورت میں کام کرے گی، نوجوان ہنگامی حالات میں گھروں تک راشن سپلائی اور فوڈ چین بحال رکھیں گے، نوجوان رضاکار ذخیرہ اندوزی کی نشاندہی کر سکیں گے۔ عثمان ڈار نے کہا کہ تمام اضلاع کے ڈپٹی کمشنرز کے ساتھ ڈیٹا شیئرنگ کی جائے گی، رضا کار فورس قرنطینیہ میں رکھے گئے افراد کی پہرا داری کا کام بھی کرے گی، نوجوانوں کو سیاسی وابستگی سے بالاتر ہو کر ٹیم میں شامل کیا جائے گا۔