ملتان: فلور ملز مالکان نے لاک ڈاؤن کو جواز بنا کر آٹے کی مصنوعی قلت پیدا کردی

ملتان: (کوہ نورنیوز) ملتان میں فلور ملز مالکان نے لاک ڈاؤن کو جواز بنا کر آٹے کی مصنوعی قلت پیدا کر دی ہے جس کی وجہ سے عام مارکیٹ میں آٹا نایاب ہونے پر فی کلو قیمت بھی 70 روپے تجاوز کر گئی ہے۔ ملتان میں فلور ملز مالکان نے ملوں کو صرف دکھاوے کے تالے لگا کر اپنی مرضی کے نرخوں پر آٹے کی سپلائی شروع کر رکھی ہے جس کی وجہ سے عام مارکیٹ اور یوٹیلیٹی سٹورز پر حکومتی نرخوں پر آٹا دستیاب نہیں جس سے آٹا کی فی من قیمت 2400 سے 2800 روپے تک پہنچ چکی ہے جس سے 60 سے 70 روپے فی کلو کے حساب سے آٹا خریدنا بھی شہریوں کیلئے مشکل ہو گیا ہے۔ عام مارکیٹ میں گندم کی فی من قیمت بھی 2 ہزار روپے سے تجاوز کر گئی ہے جس پر محکمہ فوڈ اور ضلعی انتظامیہ نے تاحال کوئی کارروائی نہیں کی تاہم اے سی سٹی کا موقف ہے کہ آٹا اور دالیں مہنگی ہونے کی شکایات موصول ہو رہی ہیں جس پر ذخیرہ اندوزوں کیخلاف کاروائی کیلیے پرائس کنٹرول مجسٹریٹس کو احکامات دے دئیے ہیں۔ ضلعی انتظامیہ اور محکمہ فوڈ کے حکام نے کورونا وائرس پھیلنے کے خدشے کو جواز بنا کر خود کو گھروں میں بند کر لیا ہے جس سے اشیائے خورونوش کی دستیابی کے حوالے سے بھی مسائل بڑھ گئے ہیں۔