فشریز کی بہتری کی پالیسی تیار ہے بس عملدر آمد کرنا ہے: علی زیدی

کراچی : (کوہ نور نیوز) وفاقی وزیر برائے بحری امور علی زیدی کا کہنا ہے کہ ماہی گیروں کی تربیت سے بہتر نتائج حاصل کیے جا سکتے ہیں، فشریز کی بہتری کی پالیسی تیار ہے بس عملدر آمد کرنا ہے۔ تفصیلات کے مطابق صوبائی دارالحکومت کراچی میں ٹونا کمیشن کے حوالے سے بین الاقوامی کانفرنس منعقد ہوئی جس میں بھارت سمیت 15 ممالک کے مندوبین نے شرکت کی۔ وفاقی وزیر برائے بحری امور علی زیدی نے بھی تقریب میں شرکت کی اور شرکا سے خطاب کیا۔ اپنے خطاب میں علی زیدی کا کہنا تھا کہ 22 ویں سیشن میں وفود کو پاکستان آمد پرخوش آمدید کہتا ہوں، سب سے پہلے ہمیں درپیش چیلنجز کی طرف دیکھنا ہوگا، ہمیں چیلنجز سے نمٹنےکے لیے اقدامات کرنا ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ ماہی گیروں کی تربیت سے بہتر نتائج حاصل کیے جا سکتے ہیں، فشریز کی بہتری کی پالیسی تیار ہے عملدر آمد کرنا ہے۔ باتیں ہو رہی ہیں فشریز تباہ ہورہی ہیں، تباہ نہیں ہورہیں بہتری کی طرف جارہی ہیں۔ علی زیدی کا کہنا تھا کہ پالیسی پر عملدر آمد کی اسٹریجی کی طرف بڑھ رہے ہیں، فنڈز کی کمی سمیت کئی چیلنجز درپیش ہیں۔ آزاد تجارتی معاہدہ پاکستان اور چین میں لازوال رشتے کا مظہر ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ آنے والے دنوں میں سی پیک اور پاک چین دوستی پر اور بھی اچھی خبریں آئیں گی۔ دونوں ملکوں کےعوام اور دوستوں کے لیے اچھی خبر ہے۔ اس سے قبل لندن میں انٹرنیشنل میری ٹائم آرگنائزیشن کے 31 ویں اسمبلی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے علی زیدی نے کہا تھا کہ پاکستان جنوبی، وسطی اور جنوب وسطی ایشیا کے ساتھ ساتھ بین الاقوامی تجارت میں اہم کردار ادا کر سکتا ہے۔ انہوں نے کہا تھا کہ پاکستان پائیدار ترقیاتی اہداف او آئی ایم او کی شقوں کی پابندی کرنے کے لیے سنجیدہ ہے۔ پاکستان بین الاقوامی سطح پر میری ٹائم سیکٹر کی بہتری میں کردار ادا کرے گا اور اگلے سال ہونے والے آئی ایم او الیکشن میں حصہ بھی لے گا۔