ہاتھ پاؤں میں متعدد اضافی انگلیوں والی بھارتی خاتون

بھارت : (کوہ نور نیوز) عموماً انسانوں کے ہاتھ اور پاؤں میں ایک یا دو اضافی اُنگلیاں پیدائشی طور پر موجود ہوتی ہیں لیکن آج ہم آپ کو ایسی خاتون کے بارے میں بتائیں کے جن کے ہاتھ اور پاؤں میں ایک دو نہیں متعدد اضافی انگلیاں ہیں۔ 63 سالہ بھارتی خاتون کو پیدائشی طور پر ایک جینیاتی بیماری لاحق ہے جس کی وجہ سے ان کے ہاتھوں اور پاؤں میں متعدد اضافی انگلیاں ہیں۔ کمار نایاک کی جینیاتی بیماری قابلِ علاج ہے لیکن ان کے گھر والوں کے پاس ان کے علاج کے پیسے نہیں تھے۔ کمار نایاک نامی خاتون کے ہاتھ کی پیدائشی طورپر 12 اور پاؤں کی 19 انگلیاں ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ ان کے پڑوسی انہیں ’چڑیل‘ کہتے ہیں اور لوگوں کے تلخ جملوں کی وجہ سے انہیں اپنا گھر تک چھوڑنا پڑ گیا۔ 63 خاتون کا کہنا ہے کہ لوگوں کی طنزیہ باتوں کی وجہ سے میں گھر سے باہر ہی نہیں نکلتی۔ خاتون کی جینیاتی بیماری کا نام ’پولی ڈیکٹائلی‘ہے اور یہ پیدائشی بیماری دنیا بھر میں 700 سے 1000 بچوں کو پیدائشی طور پر لاحق ہوتی ہے لیکن کمار نایاک کی بیماری انتہائی سنگین ہے۔ کمار نایاک کا کہنا ہے کہ میں 63 سالوں سے میں اس بیماری کو بھگت رہی ہوں، میرے گھر والے اتنے غریب ہیں کہ وہ میرا علاج ہی نہیں کروا سکتے اور اب مجھے اردگرد کے تمام لوگ الگ طرح سے دیکھتے ہیں اور مجھے گھر میں رہتے کو کہتے ہیں۔ڈاکٹرز کا کہنا ہے اس بیماری کا علاج اس فرد کی حالت کو مدِنظر رکھتے ہوئے کیا جاتا ہے جب کہ متعدد ڈاکٹرز اس بیماری کی سرجری کرنے کے لیے 1 سے 6 سال کے درمیانی عمر کی تجویز کرتے ہیں۔ اس سے قبل چین کے 21 سالہ نوجوان کو یہی بیماری لاحق تھی جس کی وجہ سے اس کے پاؤں میں 9 انگلیاں تھیں جسے بعد ازاں سرجری کر کے نکال دیا گیا تھا۔