یمن میں پیدا ہونے والے لاغر بچے کی رونگٹے کھڑے کر دینے والی تصویر

یمن : (کوہ نور نیوز) خانہ جنگی کے شکار ملک یمن میں پیدا ہونے والے ایک نومولود بچے کی تصویر نے پوری دنیا کو ہلا کر رکھ دیا۔ یمن کے دارالحکومت صنعاء کے السابین اسپتال میں پیدا ہونے والا نومولود غذائی کمی کا شکار ہے جو کہ نہایت ہی کمزور انکیوبیٹر میں سانسیں لے رہا ہے۔ صنعاء کے السابین اسپتال میں پیدا ہونے والے نومولود کی جِلد ہڈیوں سے لگی ہوئی ہے جس کی وجہ سے اس کی پسلیاں نمایاں طور پر ابھری ہوئی نظر آ رہی ہیں۔ یمن میں خانہ جنگی کا آغاز 2014 میں اس وقت ہوا جب حوثی باغیوں نے دارالحکومت صنعاء پر قبضہ کرنے کا اعلان کیا۔ حوثی باغیوں کی جانب سے حکومت کا تختہ الٹنے کو جواز بنا کر سعودی عرب نے یمن میں فضائی کارروائیاں شروع کردی۔ یمن میں ہونے والی خانہ جنگی میں اب تک ہزاروں افراد ہلاک ہو چکے ہیں اور اس تنازع کی وجہ سے لاکھوں افراد قحط سالی شکار ہو رہے ہیں۔ اقوام متحدہ نے اس تنازع کو دنیا کا بدترین انسانی المیہ قرار دیا ہے کیونکہ یمن میں لاکھوں افراد خوراک اور طبی سہولیات کی کمی کا شکار ہیں اور یہ لڑائی ملک کو قحط کے دہانے پر لے آئی ہے۔