عدالتیں امیروں کو انصاف دے سکتی ہیں تو غریبوں کو بھی ملنا چاہیے: شیریں مزاری

اسلام آباد: (کوہ نور نیوز) وفاقی وزیر برائے انسانی حقوق شیریں مزاری کا کہنا ہے کہ عدالتیں امیروں کو فوری انصاف فراہم کر سکتی ہیں تو غریبوں کو بھی انصاف ملنا چاہیے۔ لاہور ہائی کورٹ نے سابق وزیراعظم نواز شریف کو 4 ہفتوں کے لیے علاج کی غرض سے باہر جانے کی اجازت دیتے ہوئے حکومت کو ان کا نام ای سی ایل سے نکالنے کا حکم دیا تھا۔ حکومت نے عدالتی احکامات پر عمل کرتے ہوئے نواز شریف کو ایک بار بیرون ملک جانے کی اجازت دی جس کے بعد نواز شریف قطر ائیرویز کی ائیر ایمبولنس کے ذریعے لندن چلے گئے جہاں ان کا علاج جاری ہے۔نواز شریف کو بیرون ملک جانے کی اجازت دینے کے فیصلے کو کرکٹر حفیظ اور شیف گلزار سمیت کئی شخصیات کی جانب سے تنقید کا نشانہ بنایا گیا۔ وزیراعظم عمران خان نے بھی اپنے بیان میں کہا کہ کابینہ کے کئی اراکین نے نواز شریف کو بیرون ملک جانے کی اجازت دینے کی مخالفت کی لیکن مجھے رحم آ گیا۔ اب وفاقی وزیر برائے انسانی حقوق شیریں مزاری نے بھی سوشل میڈیا پر اس حوالے سے بیان دیا ہے۔ شیریں مزاری نے ٹوئٹر پر جاری اپنے بیان میں کہا کہ وزیراعظم کی جانب سے 65 سال سے بڑی عمر کے بیمار مریض قیدیوں اور 65 سال سے بڑی عمر کی خواتین قیدیوں کی رہائی کا اقدام زبردست ہے۔انہوں نے نواز شریف کو بیرون ملک جانے کے عدالتی فیصلے پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ اگر عدالت امیروں کو فوری انصاف فراہم کر سکتی ہیں تو غریب مریضوں کو بھی انسانی ہمدردی کی بنیاد پر انصاف ملنا چاہیے۔ شیریں مزاری نے اپنے ٹوئٹ کے آخر میں یہ بھی لکھا کہ ’انصاف سب کے لیے‘