نیلم جہلم ہائیڈرو پراجیکٹ کا مالی بحران سے دوچار ہونے کا انکشاف

اسلام آباد: (کوہ نور نیوز) وزارت آبی وسائل کی جانب سے بھجوائی جانیوالی سمری فیڈرل بورڈ ریونیو کی طرف سے کمنٹس نہ بھجوانے کے باعث نیلم جہلم ہائیڈرو پاور پراجیکٹ کو مالی بحران سے نکالنے کیلیے 55 ارب روپے کی کمرشل فنانسنگ کی اجازت میں تاخیر کا انکشاف ہوا ہے۔ وزارت آبی وسائل نے فیڈرل بورڈ آف ریونیو کو یاددہانی کیلیے خط لکھ دیا ہے، وزارت آبی وسائل کی جانب سے چیئرمین فیڈرل بورڈ آف ریونیو کو لکھے جانیوالے یاددہانی خط میں وزارت آبی وسائل کی جانب سے پندرہ اپریل 2019کو لکھے گئے خط کا حوالہ دیا گیا ہے۔ خط میں کہا ہے کہ مذکورہ سمری بارے ابھی تک ایف بی آرکی طرف سے آرا و کمنٹس نہیں بھجوائے گئے ہیں جس کی وجہ سے نیلم جہلم ہائیڈرو پاور پراجیکٹ کو مالی بحران سے نکالنے کیلیے 55 ارب روپے کی کمرشل فنانسنگ کی اجازت دینے کی سمری ای سی سی میں پیش نہیں ہوسکی ہے، لہٰذا ایک بار پھر درخواست کی جاتی ہے کہ مذکورہ سمری پر جلد کمنٹس بھجوائے جائیں ۔