حمزہ شہباز نے نیب کےگھر پر چھاپہ مارنے کا اقدام ہائی کورٹ میں چیلنج کر دیا

لاہور : (کوہ نور نیوز) اپوزیشن لیڈر پنجاب اسمبلی حمزہ شہباز نے نیب کےگھر پر چھاپہ مارنے کا اقدام ہائی کورٹ میں چیلنج کر دیا، جس میں کہا گیا نیب نے گھر پر موجود خواتین کو ہراساں کیا، ڈی جی نیب اور ڈپٹی ڈائریکٹر چوہدری اصغر کے خلاف کارروائی کی جائے۔ تفصیلات کے مطابق لاہور ہائی کورٹ میں اپوزیشن لیڈر پنجاب اسمبلی حمزہ شہباز نے نیب کےگھر پر چھاپہ مارنے کا اقدام کے خلاف درخواست دائر کردی ، جس میں کہا گیا عدالت نے نیب کو چھاپوں اور ہراساں کرنے سے روکا، نیب نے گھر پر موجود خواتین کو ہراساں کیا۔ حمزہ شہباز کا کہنا تھا نیب کا یہ عمل توہین عدالت ہے لہذا کارروائی کی جائے۔ درخواست میں حمزہ شہباز کی ڈی جی نیب اورڈپٹی ڈائریکٹر نیب کے خلاف توہین عدالت کی استدعا کرتے ہوئے کہا ڈی جی نیب اور ڈپٹی ڈائریکٹر چوہدری اصغر کے خلاف کارروائی کی جائے۔ یاد رہے کہ آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس اور منی لانڈرنگ کیس میں نیب نے دو بار حمزہ شہباز کی گرفتاری کے لئے ان کے گھر پر چھاپہ مارا تھا تاہم نیب انھیں گرفتار کرنے میں ناکام رہی تھی۔نیب نے اعلامیے میں کہا تھا کہ نیب لاہور کی ٹیم حمزہ شہباز کی آمدن سے زائد اثاثہ جات اور مبینہ منی لانڈرنگ کے کیس میں ٹھوس شواہد کی بنیاد پر گرفتاری کے لیے گئی تھی تاہم حمزہ شہباز کے گارڈز کی جانب سے غنڈہ گردی کا مظاہرہ کیا گیا جبکہ حمزہ شہباز کےمحافظوں نےنیب اہلکاروں کو دھمکیاں دی۔ بعد ازاں لاہور ہائی کوٹ نے حمزہ شہباز کی 10 دن کی حفاظتی ضمانت منظور کرلی تھی اور اور نیب سےتفصیلی جواب طلب کرلیا تھا۔