سیاست کو صراط مستقیم پر چلانے کی وجہ سے نواز شریف جیل میں ہیں: مشاہد اللہ

لاہور: (کوہ نور نیوز) مسلم لیگ (ن) کے رہنما سینیٹر مشاہد اللہ خان کا کہنا ہے کہ ملکی سیاست کو صراط مستقیم پر چلانے کی وجہ سے نواز شریف جیل میں ہیں۔ سابق وزیراعظم نواز شریف سے کوٹ لکھپت جیل میں ملاقات کی آمد کے موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے مشاہد اللہ خان نے کہا کہ نواز شریف اس پارٹی کا سربراہ ہے جسے حکومت میں ہونا چاہیے تھا، جن کو ملک پر مسلط کیا گیا ہے اس سے ملک کو شدید نقصان ہوا ہے۔ مشاہد اللہ خان نے کہا کہ پاکستان کو ایٹمی اور معاشی قوت بنانے میں نواز شریف کا کردار ہے، نواز شریف سر جھکائے گا نہ ہی ان کے کروڑوں ساتھی سر جھکائیں گے، وہ جمہوریت کے اسٹیک ہولڈر ہیں۔ لیگی رہنما کا کہنا تھا کہ جو کل کہتا تھا میں کسی کے سامنے ہاتھ نہیں پھیلاؤں گا وہ آج ہر کسی کے سامنے ہاتھ پھیلا رہا ہے، ہر کسی کے سامنے ہاتھ پھیلانے پر ملک کی بے توقیری ہوئی ہے۔ مشاہد اللہ خان نے کہا کہ نواز شریف محسن پاکستان ہیں جنہیں سر نہ جھکانے کی سزا مل رہی ہے اور سزائیں ان ہی لوگوں کے لیے ہوتی ہیں جو سر نہیں جھکاتے۔ لیگی رہنما مشاہد اللہ خان کا کہنا تھا کہ نواز شریف اور شہباز شریف بہادری سے حالات کا سامنا کررہے ہیں، نواز شریف کو زمین کی ساتویں تہہ میں بند کردیں مگر وہ عوام کے دلوں میں رہیں گے۔ انہوں نے کہا کہ جولائی کا الیکشن شفاف ہوتا تو پاکستان آج بہت آگے جاچکا ہوتا، مسلط حکومت بھکاری بن کر دنیا میں گھوم رہی ہے، قرض لے لیا ایک سال بعد کیا ہوگا ان کے پاس کوئی پلان نہیں، یہ جمہوریت اور پاکستان دشمنی کا ایجنڈا ہے۔ مشاہد اللہ خان نے کہا کہ عمران خان کو سمجھ لینا چاہیے کہ انہیں اپنی کرپشن کا حساب دینا ہوگا، ایک کروڑ نوکریاں کب دیں گے اور پچاس لاکھ گھر کب بنیں گے، ای او بی آئی کے ملزمان تحریک انصاف میں ہیں یا نہیں؟ قوم کو بتائیں، ان کی حرکتیں چور مچائے شور کے مترادف ہیں۔