ملک کی تقدیربدلنےکیلئےنظریاتی تعلقات قائم کرنےکی ضرورت ہے، شاہ محمو دقریشی

ملتان : (کوہ نور نیوز) وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ دہشت گردی کےخاتمےکیلئےصوفی ازم کی تعلیمات پرعمل لازم ہے، ملک کی تقدیر بدلنے کیلئے نظریاتی تعلقات قائم کرنےکی ضرورت ہے۔ تفصیلات کے مطابق ملتان میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے انٹرنیشنل صوفی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا انٹرنیشنل صوفی کانفرنس میں شرکت کرنےوالوں کاشکرگزارہوں، ہمیں اپنابیانیہ بدلنےکی ضرورت نہیں،دنیاہمیں سمجھ رہی ہے، بی زیڈیوکاشمارپاکستان کی بہترین یونیورسٹیزمیں ہوتاہے۔ وزیرخارجہ کا کہنا تھا کہ دہشت گردی کےخاتمےکیلئےصوفی ازم کی تعلیمات پرعمل لازم ہے، برصغیرمیں دین کی سربلندی کیلئےصوفی کرام کاکرداراہم رہا، موجودہ وقت میں پاکستان میں اتحاداوریگانگت کی اشد ضرورت ہے۔ شاہ محمود قریشی نے کہا ہم ایک وفاق ہیں،ملک بھرکےعوام کی بات کرتےہیں ایک کلاس کی نہیں، صوفی کرام کاپیغام معاشرےمیں اتحاد اورامن ہے۔ دورہ چین کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ حال ہی میں چین کےدورےسےواپس آرہےہیں،سی پیک کابہت ذکرہے، سی پیک گیم چینجرکےساتھ خطےمیں روابط کابھی ایک منصوبہ ہے، سی پیک علاقوں کےانفرااسٹرکچرکوجوڑنےکابھی منصوبہ ہے۔ وزیرخارجہ نے کہا روڈلنگ،ریل لنک،ایئرلنک کےذریعےدوردرازعلاقوں سےجڑرہےہیں، ہم بات کرتےہیں مدینہ کی بغدادکی،زبانیں مختلف ثقافت مختلف ہے، ہمارامذہب ایک ہے،انٹرنیشنل صوفی کانفرنس سےاتحادکاپیغام جائیگا۔ شاہ محمودقریشی کا کہنا تھا کہ مذہب کاتعلق حکمرانوں سےنہیں ہوتا وجوہات کانام موقع ہے،بہت کچھ درست کرنےکی ضرورت ہے، ملک کی تقدیر بدلنے کیلئے نظریاتی تعلقات قائم کرنے کی ضرورت ہے۔ انھوں نے مزید کہا کہ اسلام نےتوہمیشہ امن اوربرابری کادرس دیاہےاوردےرہاہے، خانقاہوں میں وہ لوگ بھی آتےہیں جوکلمہ گونہیں۔