ایک آدمی منی لانڈرنگ پر تالیوں سے استقبال کا کہہ رہا ہے: عمران خان

اسلام آباد: (کوہ نور نیوز) اسلام آباد میں انصاف مسیحی برادری کنونشن سے خطاب کرتے ہوئےعمران خان نے کہاکہ پاکستان میں کسی بھی کمزور طبقے کو ان کے حقوق نہیں ملتے، ڈھائی کروڑ پاکستانی بچے اسکول نہیں جاتے، انصاف کی فراہمی ریاست کا فرض ہوتا ہے، جب معاشرے میں قانون کی بالادستی نہیں ہوتی تب کمزور مارا جاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایک آدمی 300 ارب روپے کی منی لانڈرنگ کرکے معصوم بن جاتا ہے، پھر وہ کہتا ہے لاہور آمد پرتالیوں کے ساتھ استقبال کریں، دنیا کا کوئی وزیراعظم منی لانڈرنگ میں پکڑا جائے وہ شرم سے نہیں نکلتا، منی لانڈرنگ کرنے والے وزیراعظم کو انڈے پڑتے ہیں۔ چیئرمین پی ٹی آئی کا کہنا تھاکہ ریمنڈ ڈیوس نے دن دیہاڑے دوقتل کردیئے لیکن ہمارا قانون اسے پکڑ نہیں سکتا، یہاں کمزور کے لیے کچھ اور طاقتور کے لیے قانون اور ہے، تمام طبقات کے لوگ کہہ رہے ہیں کہ انہیں حقوق نہیں مل رہے۔ بعدازاں بورے والا میں جلسے سے خطاب میں عمران خان کا کہنا تھا کہ دو ہفتے رہ گئے ہیں، معلوم نہیں اللہ کو کیا منظور ہے، میرا دل کہہ رہا ہے تبدیلی کا انقلاب آنے والا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی نہ ہوتی تو ان ہی دونوں جماعتوں کی باریاں چلتی رہتیں، عوام کے پاس ن لیگ اورپیپلز پارٹی کےعلاوہ کوئی چوائس نہیں تھی۔ عمران خان نے کہا کہ اب ان کے بچے باری لینے کے لئے تیار ہوگئے ہیں، بے بی بلاول نے زندگی میں نوکری نہیں کی، ایک گھنٹہ کام نہیں کیا اور ملک سنبھالنے آگیا۔ چیئرمین تحریک انصاف نے کہا کہ مریم نواز کہتی ہے لندن تو کیا پاکستان میں بھی پراپرٹی نہیں جبکہ بھائی کہتا تھا ساری پراپرٹی ہماری ہے۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف کی سزا پر شہباز اور حمزہ خوشی میں لڈو بانٹ رہے ہیں اور ہاتھ اٹھا کر مجھے دعا دے رہے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ یہ لوگ قوم کو بھیڑ بکریاں سمجھتے ہیں، پہلے والدین لوٹتے ہیں پھر بچے تیار ہوجاتے ہیں۔